ہم محکوموں کے پاؤں تلے

  • Work-from-home

*Sarlaa*

Moderator
VIP
Apr 16, 2013
17,846
7,109
363
31
Pakistan.. karachi
لازم ہے کہ ہم بھی دیکھیں گے
وہ دن کہ کہ جس کا وعدہ ہے
جو لوحِ ازل پہ لکھا ہے
جب ظُلم وسِتم کے کوہِ گراں
روئی کی طرح اڑ جائینگے
ہم محکوموں کے پاؤں تلے
یہ دھرتی دھڑ دھڑ دھڑکے گی
اور اہلِ حُکم کے سر اوپر
جب بجلی کڑ کڑ کڑکے گی
جب ارض خدا کے کعبے سے
سب بت اٹھوائے جائینگے
ہم اہلِ صفا مردودِ حرم
مسند پہ بٹھائے جائینگے
سب تاج اُچھالے جائینگے
سب تخت گِرائے جائینگے
بس نام رہیگا اللہ کا
جو غیب بھی ہے اور حاضر بھی
جو منظر بھی ہے ناظر بھی
اُٹھے گا انالحق کا نعرہ
جو میں بھی ہوں اور تم بھی ہو
اور راج کریگی خلقِ خدا
جو میں بھی ہوں اور تم بھی ہو
لازِم ہے کہ ہم بھی دیکھیں گے
لازِم ہے کہ ہم بھی دیکھیں گے
---------------------------------~!
فیض احمد فیض
 
Top