Hum Karain Baat Daleelon Se

ROHAAN

TM Star
Aug 14, 2016
1,205
683
413
23658700_1296066823832915_2857932614312715318_n.jpg


ہم کریں بات دلیلوں سے

ہم کریں بات دلیلوں سے،،،،،،،،،، تو رد ہوتی ہے
اس کے ہونٹوں کی خموشی بھی سند ہوتی ہے

سانس لیتے ہوئے انساں بھی ہے لاشوں کی طرح
اب دھڑکتے ہوئے دل کی بھی،،،،،،، لحد ہوتی ہے

اپنی آواز کے پتھر بھی،،،،،،،، نہ اس تک پہنچے
اس کی آنکھوں کے اشارے میں بھی زد ہوتی ہے

جس کی گردن میں ہے پھندا وہی انسان بڑا
سولیوں سے یہاں،،،،،،، پیمائش قد ہوتی ہے

شعبدہ گر بھی پہنتے ہے خطیبوں کا لباس
بولتا جہل ہے،،،،،،،،،،،، بدنام خرد ہوتی ہے

کچھ نہ کہنے سے بھی چھن جاتا ہے اعزاز سخن
ظلم سہنے سے بھی،،،،،،،، ظالم کی مدد ہوتی ہے
 
  • Like
Reactions: shehr-e-tanhayi
Top