کہنے کو محبت اک نعمت ہے

  • Work-from-home

ROHAAN

TM Star
Aug 14, 2016
1,795
927
613


کہنے کو محبت اک نعمت ہے

میں نے اس سے پُوچھا کہ محبت کیا ہے
وہ بولی کہ
کہنے کو محبت اک نعمت ہے
جن کو ملے اُن کے لیے غنیمت ہے
محبت باغ میں اک حسیں پھول ہے
محبت نرم شبنم کا قطرہ بھی ہے
محبت درد کے سمندر میں خوشی کا ساحل ہے
محبت آسماں کا چمکتا ستارہ بھی ہے
محبت روح کا سکون ہے
محبت بے لوس ہو تو عبادت بھی ہے
محبت خوبصورت زندگی ہے
محبت تاریکی میں امید کا چراغ بھی ہے
محبت زینت ہے دنیائے عشق کی
محبت چاہتون کا میلہ بھی ہے
محبت راگنی ہے سُروں کی
محبت دلوں کا ساز بھی ہے
محبت اک پاکیزہ سی چیز ہے
محبت خوائشِ زندگی بھی ہے
محبت نہ ہو تو زندگی خاموش سی ہے
محبت بنا آدمی کمزور بھی ہے
پھر اس نے پوچھا مجھ سے کے تو بتا
تیرے نزدیک محبت کیا ہے
میں نے کہا محبت زحمت ہے
نہ ہو تو زندگی بھی نعمت ہے
محبت دھوپ کی شدت ہے
محبت طویل مسافت بھی ہے
محبت غمِ زندگی ہے
محبت بہار میں خزاں کا موسم بھی ہے
محبت اک نا مکمل فسانہ ہے
محبت تو صرف مرنے کا بہانہ ہے
وہ بولی ارے او ناداں
زحمت کو نعمت میں بدلنا ہی تو محبت ہے
دھوپ سے چھائوں کرنا ہی تو محبت ہے
زمانے سے لڑنا ہی تو محبت ہے
طویل مسافت طے کرنا ہی تو محبت ہے
غموں کو زندگی میں شامل کرنا ہی تو محبت ہے
خزاں میں بہار لانا ہی تو محبت ہے
ادھورا فسانہ مکمل کرنا ہی تو محبت ہے
یہ سب نہ ہو تو یہ محبت کیسی محبت ہے
میں نے کہا
ایسی محبت میں کامیاب کون ہو
زمانے بھر میں بدنام کون ہو
اس محبت میں نیلام کون ہو
حالاتِ بے بسی میں سرِ عام کون ہو
کون کرے ان رسوائیوں کا سامنا
اس دلدل میں پار کون ہو
کون چاہے گا سولی پہ لٹکنا
اس پیاڑ تلے مسمار کون ہو
وہ بولی
جو نہ ہو کامیاب اس میں وہ عاشق ہی نہیں
جو خوفِ بدنامی میں رہے وہ عاشق ہی نہیں
جو نیلام ہونے نہ پائے وہ عاشق ہی نہیں
جو رسوائیاں سہنے سے کترائے وہ عاشق ہی نہیں
جو خود کو پار نہ لگائے وہ عاشق ہی نہیں
جو موت سے گھبرائے وہ عاشق ہی نہیں
جو مجنو سا نہ بن پائے وہ عاشق ہی نہیں
 

shehr-e-tanhayi

Super Magic Jori
Administrator
Jul 20, 2015
39,674
11,674
1,313
bahot khoobsorat nazam

lakin hum ne to aaj tak itna hi jana

محبت اک نا مکمل فسانہ ہے
محبت تو صرف مرنے کا بہانہ ہے
 
  • Like
Reactions: ROHAAN

Aaylaaaaa

priNcess
TM Star
Sep 25, 2014
4,096
2,430
1,313
kohkaaf


کہنے کو محبت اک نعمت ہے

میں نے اس سے پُوچھا کہ محبت کیا ہے
وہ بولی کہ
کہنے کو محبت اک نعمت ہے
جن کو ملے اُن کے لیے غنیمت ہے
محبت باغ میں اک حسیں پھول ہے
محبت نرم شبنم کا قطرہ بھی ہے
محبت درد کے سمندر میں خوشی کا ساحل ہے
محبت آسماں کا چمکتا ستارہ بھی ہے
محبت روح کا سکون ہے
محبت بے لوس ہو تو عبادت بھی ہے
محبت خوبصورت زندگی ہے
محبت تاریکی میں امید کا چراغ بھی ہے
محبت زینت ہے دنیائے عشق کی
محبت چاہتون کا میلہ بھی ہے
محبت راگنی ہے سُروں کی
محبت دلوں کا ساز بھی ہے
محبت اک پاکیزہ سی چیز ہے
محبت خوائشِ زندگی بھی ہے
محبت نہ ہو تو زندگی خاموش سی ہے
محبت بنا آدمی کمزور بھی ہے
پھر اس نے پوچھا مجھ سے کے تو بتا
تیرے نزدیک محبت کیا ہے
میں نے کہا محبت زحمت ہے
نہ ہو تو زندگی بھی نعمت ہے
محبت دھوپ کی شدت ہے
محبت طویل مسافت بھی ہے
محبت غمِ زندگی ہے
محبت بہار میں خزاں کا موسم بھی ہے
محبت اک نا مکمل فسانہ ہے
محبت تو صرف مرنے کا بہانہ ہے
وہ بولی ارے او ناداں
زحمت کو نعمت میں بدلنا ہی تو محبت ہے
دھوپ سے چھائوں کرنا ہی تو محبت ہے
زمانے سے لڑنا ہی تو محبت ہے
طویل مسافت طے کرنا ہی تو محبت ہے
غموں کو زندگی میں شامل کرنا ہی تو محبت ہے
خزاں میں بہار لانا ہی تو محبت ہے
ادھورا فسانہ مکمل کرنا ہی تو محبت ہے
یہ سب نہ ہو تو یہ محبت کیسی محبت ہے
میں نے کہا
ایسی محبت میں کامیاب کون ہو
زمانے بھر میں بدنام کون ہو
اس محبت میں نیلام کون ہو
حالاتِ بے بسی میں سرِ عام کون ہو
کون کرے ان رسوائیوں کا سامنا
اس دلدل میں پار کون ہو
کون چاہے گا سولی پہ لٹکنا
اس پیاڑ تلے مسمار کون ہو
وہ بولی
جو نہ ہو کامیاب اس میں وہ عاشق ہی نہیں
جو خوفِ بدنامی میں رہے وہ عاشق ہی نہیں
جو نیلام ہونے نہ پائے وہ عاشق ہی نہیں
جو رسوائیاں سہنے سے کترائے وہ عاشق ہی نہیں
جو خود کو پار نہ لگائے وہ عاشق ہی نہیں
جو موت سے گھبرائے وہ عاشق ہی نہیں
جو مجنو سا نہ بن پائے وہ عاشق ہی نہیں
Bht khoob
 
Top